Ministry of Planning
Development & Reform

Press Release

World Bank Delegation Called on Secretary Planning...

Published : 23 October 2017

A senior delegation from World Bank, (climate change Non-lending techn...


Deputy Chairman Planning Commission Mr. Sartaj Azi...

Published : 19 October 2017

Central Development Working Party has sanctioned 31 development projec...


وزارت منصوبہ بندی ، ترقی و ا...

Published : 16 October 2017

ڈپٹی چئیرمین پلاننگ کمیشن سرتاج عزیز ...


Secretary Planning Commission and Reform, Shoaib A...

Published : 16 October 2017

Pakistan is the sixth most populous country in the world. It falls amo...


سنٹرل ڈویلپمنٹ ورکنگ پارٹی کے اجلاس میں 53.6 ارب روپے کی لاگت کے چوبیس منصوبے منظور

Dated : 19 September 2017

سنٹرل ڈویلپمنٹ ورکنگ پارٹی کے اجلاس میں 53.6 ارب روپے کی لاگت کے چوبیس منصوبے منظور جبکہ اجلاس میں 27.1 ارب روپے لاگت کے 3 منصوبے ایکنک کو حتمی منظوری کے لیے بھجوادئے گئے ۔
سنٹرل ڈیویلپمنٹ ورکنگ پارٹ کا اجلاس ڈپٹی چئیرمین سرتاج عزیز کی زیر صدارت ہوا ، اجلاس میں وفاقی وزارتوں اور صوبائی محکموں کے اعلیٰ حکام کی شرکت ۔
توانائی، پانی، ماحولیات، ٹرانسپورٹ و مواصلات، انفارمیشن ٹیکنالوجی، فزیکل پلاننگ، سائنس و ٹیکنالوجی اور صحت سے متعلق منصوبے پیش کیے گئے

توانائی سے متعلق 18.8 ارب روپے ، آبی وسائل سے متعلق 1186 ملین روپے ، ماحولیات سے متعلق 3.8 ارب ، ٹرانسپورٹ و مواصلات سے متعلق 14.9 ارب روپے کے منصوبے شامل ہیں

انفارمیشن ٹیکنالوجی 220.012 ملین روپے ، سائنس و ٹیکنالوجی5.6 ارب اور صحت سے متعلق 2.9 ارب کے منصوبے شامل ہیں

پانی و سائل ڈویژن
۔ پانی وسائل ڈویژن کے دو منصوبے پیش کئے گئے جس میں اباتو ، ڈیسارا اور سانزالہ ڈیم چمن قلعہ عبداللہ ک تعمیر ہے جس کے لیے 300 ملین روپے لاگت ہو گی
۔ پانی وسائل ڈویژن کا ہی دوسرا منصوبہ 886.699 ملین روپے کی لاگت کا پیش کیا گیا جس میں سندھ میں چھوٹے ڈیموں کی تعمیر ، ڈیموں میں پانی کی سٹوریج ، تارون کی تنصیبات شامل ہیں


ٹرانسپورٹ اینڈ کمیونیکیشن
سی ڈی ڈبلیو پی میں وزارت مواصلات کے 5 منصوبے پیش کیے گئے جس میں ساڑھے دس ارب روپے کی لاگت سے دریائے سندھ کے مقام پر لیہ کو تونسہ سے ملانے کے لیے پل کا منصوبہ پیش کیا گیا جسے منظور کیا لیا گیا ۔
وزارت مواصلات کا دوسرا منصوبہ 595.629 ملین روپے کی لاگت کا دیا گیا جس میں شیخپورا کوٹ پنڈی ڈاس اینٹر چینج موٹر وے ایم ۔ ٹو کی تعمیر شامل ہے جس کا مقصد
۔ وزارت مواصلات کا تیسرا منصوبہ شیخوپورا میں ہی فاروقہ آباد انٹرچینج موٹر وے ایم ۔ ٹو کی تعمیر کا ہے جس کی لاگت 861.38 ملین روپے پیش کی گئی
۔ سیالکوٹ پسرور روڈ کی ساڑھے 26 کلو میٹر طویل سڑک کو دہرا کرنے کے لیے 2.9 ارب روپے کی لاگت کا منصوبہ پیش کیا اگیا جس کو اجلاس نے منظور کر لیا ۔
فزیکل پلاننگ اینڈ ہاوسنگ
۔ کرم ایجنسی کے علاقہ چمنجانا، سما بازار اورکزئی ایجنسی میں 4 ونگ کی رہائش کی تعمیر کے لیے 1422.392 ملین کا منصوبہ وزارت داخلہ نے پیش کیا نے جسے اجلاس میں منظور کر لیا گیا ۔
۔ مغربی سرحد کے سی اے ایف مینجمنٹ کی صلاحیت کو بڑھانے کے لیے فرنٹیئر کور بلوچستان کے 2 سیکٹر میں ہیڈ کوارٹر بنانے کے لیے 2167.00 ملین روپے اور 149.504 ملین روپے کا منصوبہ بھی منظور کر لیا گیا ۔
۔ مہمند ایجنسی فاٹا میں ہاشم ، سورن اور مینا باجوڑ ایجنسی 3 ونگ کی جگہ کی تعمیر کے لیے 1066.794 ملین روپے کی لاگت کا منصوبہ منظور کیا گیا

وزارت خزانہ کی جانب سے گوادر پورٹ میں سمارٹ سٹی پلان کے لیے 521.00 ملین روپے کا منصوبہ اجلاس نے منظور کر لیا ۔

۔ فیڈرل بورڈ آف ریونیو نے اسلام آباد میں ریجنل ٹیکس آفس کی تعمیر کے لیے 116.208 ملین روپے کی لاگت کا منصوبہ پیش کیا ، جسے اجلاس نے منظور کر لیا

۔ چشمہ ڈسٹرکٹ میانوالی میں پی این آر اے کی رہائش کی تعمیر کا منصوبہ 480.00 ملین روپے کا پیش کیا جس کو سی ڈی ڈبلیو پی نے منظور کر لیا ۔

توانائی
۔وزارت پانی و بجلی کی جانب سے لاھور میں پنجاب یونیورسٹی کے گرڈ سٹیشن سے منسلک ٹرانسمیشن لائن220 کے وی کی تعمیر کے لیے 2948.11 ملین روپے کا منصوبہ منظور کیا جبکہ اسلام آباد زیرو پوائینٹ میں 220 کے وی کا 2541.98 ملین روپے کی لاگت کا منصوبہ منظور کیا گیا۔
۔ اجلاس میں این ٹی ڈی سی کی توسیع اور اپ گریڈیشن کے لیے 12802.55 ملین روپے کا پیش کیا جسے اجلاس نے ایکنک بھجوا دیا ۔
۔ وزارت توانائی نے پورن ڈسٹرکٹ شانگلہ میں 132 کے وی گریڈ سٹیشن کی تشکیل کا منصوبہ پیش کیا ، جس کی کل لاگت 529.69 ملین روپے دی گئی ، جس کا مقصد پارن شانگلہ میں وولٹج لائن کو بہتر بنانے ، لائن نقصان کو کم کرنے اور صارفین کو نئے کونیکشنز فراہم کرنے کے لیے ہے ۔ جسے اجلاس نے منظور کر لیا ۔

ماحولیات
وزارت ماحولیات نے شمالی پاکستان گلگت بلتستان میں سیلاب کے خطرات میں کمی کے باعث گلیوں کی جھیلوں کی تعداد میں اضافہ کے لیے 3.8 ارب روپے کی لاگت کا منصوبہ پیش کیا گیا جسے اجلاس نے ایکنک کو بھجوا دیا ۔


انفارمیشن ٹیکنالوجی

۔ پاکستان کثیر مقصدی سیٹیلائٹ کے امکانات اور نظام تعریف کا مطالعہ کے لیے 220.012 ملین روپے کی لاگت کا منصوبہ اجلاس نے منظور کر لیا ۔








سائنس اینڈ ٹیکنالوجی

۔ ہائر ایجوکیشن کمیشن نے لکی مروت میں بنوں یونیورسٹی سائشن اینڈ ٹیکنالوجی کی اپ گریڈیشن کے لیے 1522.569 ملین روپے کا منصوبہ پیش کیا جس کے تحت پی این آر اے اور پی اے ای سی کے ملازمین کو رہائش مہیا کی جائے گی ، جس کو سنٹرل ڈویلوپمنٹ ورکنگ پارٹی کے اجلاس نے منظور کر لیا

۔ ہائر ایجوکیشن کمیشن نے بلوچستان یونیورسٹی کے کمیپسز کی دوبارہ سے تعمیر اور ان کو مضبوط بنانے کے لیے 890.239 ملین روپے لاگت کا منصوبہ پیش کیا جس کو اجلاس نے منظور کر لیا

۔ بلوچستان میں لیسبلا یونیورسٹی آف زراعت، پانی اور سمندری سائنس لیسبلا میں بنیادی ڈھانچے کی ترقی کے لیے 1448.685 ملین روپے لاگت کا منصوبہ پیش کیا گیا جس کو اجلاس نے منظور کر لیا

۔ ہائر ایجوکیشن کمیشن نے اپنا چوتھا منصوبہ 1769.845 ملین روہے کی لاگت کا بلتستان سکردو میں یونیورسٹی کے قیام کے لیے پیش کیا جس کو اجلاس نے منظور کر لیا

صحت
۔ پاکستان اٹامک انرجی کمیشن نے اٹامک انرجی کینسر ہسپتال نوری کی اپ گریڈیشن کے لیے 2987.525 ملین روپے لاگت کا پیش کیا جس کو اجلاس نے منظور کر لیا

اس کے علاوہ سی ڈی ڈبلیو پی کے اجلاس میں 8.9 ارب کی مالیت کے 3 پوزیشن پیپرز بھی منظور کر لیے گئے ۔۔