Ministry of Planning
Development & Reform
News Alerts: وفاقی وزیر برائے منصوبہ بندی و ترقی احسن اقبال کی وزارت منصوبہ بندی کے افسران اور میڈیا کے نمائندوں ترقیاتی منصوبوں میں شفافیت کے لئے اٹھائے گئے اقدامات اور ان کے نتائج پر گفتگو ---------- ‏وفاقی حکومت نے۲۰۱۳میں پلاننگ کمیشن کو دوبارہ خودمختار حیثیت دی تاکہ پیشہ ورانہ مہارت کےحامل افراد کے ذریعےمنصوبہ بندی کا عمل مؤثربنایا جاسکے ‏ہم نے منصوبہ بندی کے عمل میں شفافیت کو فروغ دیا اور ٹوکن رقم رکھ کر نئے منصوبے بنانے کے عمل کی حوصلہ شکنی کی، احسن اقبال ---------- ‏وزارت منصوبہ بندی کے قابل اور اہل اہلکاروں اور افسران کی محنت کی بدولت ہم اس قابل ہوئے کہ قومی خزانےکے 550 ارب روپےبچا سکے، احسن اقبال ---------- ‏وزارت منصوبہ بندی کی کوششوں کے نتیجے میں نیو اسلام آباد انٹرنیشنل ائیرپورٹ اور منڈا ڈیم جیسے منصوبوں کو ازسر نو زندہ کیا، احسن اقبال ---------- ‏وزرات منصوبہ بندی نے ماضی کے برعکس سیاسی دباؤ ہر منصوبے بنانے کی بجائے ماہرین کی مشاورت سے قابل عمل منصوبوں کا آغاز کیا، احسن اقبال ---------- ‏وزارت منصوبہ بندی نے ۷۵۲ منصوبوں میں شفافیت اور اخراجات میں توازن رکھ کر۵۵۰ ارب روپے کی بچت کی، احسن اقبال ---------- آج کا دن ہمارے لیے خوشی منانے کا ہے اس وزارت کے افسران اور اہلکاروں کا یہ اعزاز ہے کہ ہم نے اپنی محنت سے 550 ارب کی بچت کی اس رقم کی بچت کو کسی نئے منصوبے میں لگایا جائے گا، احسن اقبال ---------- ہم نے پہلے مکمل طور پر تخمینہ لگایا، انکی فیزیبلٹی رپورٹ بنائی گئی اور پھر فنڈز کی فراہمی کو یقینی بنایا، احسن اقبال ---------- ‏نیلم جہلم پراجیکٹ 80 ارب سے بنایا جانا تھا لیکن غلط منصوبہ بندی اور سیاسی عوامل کی وجہ سے آج اس پر 400 سے شائد ارب لگ رہے ہیں، احسن اقبال ---------- ‏نیلم جہلم منصوبے کے بنیادی حقائق کا تخمینہ ہی نہیں لگایا گیا تھا جسکے سبب اب اتنی بڑی رقم لگ رہی ہے، احسن اقبال ---------- ‏ہمیں این 85 جیسے منصوبے ورثے میں ملے، ہم نے ان کا ازسرنو جائزہ لیا اور منصوبوں کو قابل عمل بنایا، احسن اقبال ---------- ‏لواری ٹنل کے منصوبے ہر بھی تقاریر تو ہر دور میں ہوئی پر فنڈ کسی نے جاری نہیں کیے، احسن اقبال ---------- اسلام آباد ایئرپورٹ کو ایک سفید ہاتھی بنا دیا گیا تھا نہ پانی کا انتظام ہوا نہ رابطہ سڑکیں بنائی گئی نہ ہی بجلی کا بندوبست ہوا، احسن اقبال ---------- رواں سال نیو اسلاآباد ایئرپورٹ پر آپریشن کا آغاز کر دیا جائے گا، احسن اقبال ---------- بلوچستان کی کچی کنال کے لیے فنڈ جاری کیے جس سے صوبے بھر کو پانی کی سہولت میسر ہو جائے گی، احسن اقبال ---------- ‏کرم ٹنگی ڈیم کا منصوبہ بھی کئی سال سے التوا کا شکار تھا، احسن اقبال

Press Release

اسلام آباد میں وفاقی وزیر ا...

Published : 26 May 2017

اسلام آباد میں وفاقی وزیر احسن اقبال ک...


Federal Minister Ahsan Iqbal has said that Pakista...

Published : 19 May 2017

Federal Minister Ahsan Iqbal has said that Pakistan’s economy has re...


Gwadar would become an international smart port c...

Published : 15 May 2017

BEIJING, May 15, 2017: Pakistan and China signed various agreements an...


Ahsan Iqbal has refuted news story titled “CPEC ...

Published : 15 May 2017

Minister for Planning, Development & Reform Professor Ahsan Iqbal has...


First phase of China-Pakistan Economic Corridor (CPEC) will be completed by 2018: Ahsan Iqbal

Dated : 18 April 2016

Federal Minister Planning, Development & Reform Ahsan Iqbal today stated, “First phase of China-Pakistan Economic Corridor (CPEC) will be completed by 2018 The production of 10,000 MGW of energy under CPEC would help to overcome the energy crisis by 2018 as well as upgrade the existing road network of the country especially western route through construction of missing links on it will provide a safest and shortest passage of cargo from Gwadar Seaport to upcountry for their onward movement to China’s western provinces, he stated in a statement on CPEC.

Ahsan Iqbal said that Pakistan and China are working closely and wholeheartedly to implement CPEC projects in speediest manner. Both sides are in constant touch through forums under CPEC framework and are moving ahead smoothly and promptly to complete CPEC projects. Minister Planning & Development said that both sides realized the importance of CPEC for their own interests and for the benefit of whole the region to integrate it economically for social and economic uplift three billion people of the region.

Ahsan Iqbal said that there is unanimity in file and ranks of Pakistani society that CPEC is a historical opportunity for sustained economic development and inclusive prosperity of the country and we must capitalize on it through a united approach. Pakistan political leadership, civilian government and military leadership, time and again, demonstrated their commitment to completion of CPEC. “They are all on the same page for a bigger national cause,” Ahsan Iqbal stated and added that declarations of two All Parties Conferences (APCs) on CPEC bear testimony to this fact.