Ministry of Planning
Development & Reform
News Alerts: وفاقی وزیر و ڈپٹی چئیرمین پلاننگ کمیشن احسن اقبال کی صدارت میں سنٹرل ڈیویلپمنٹ ورکنگ پارٹی کا اجلاس ---------- اجلاس میں وفاقی وزارتوں اور صوبائی محکموں کے اعلیٰ حکام کی شرکت ---------- سی ڈی ڈبلیو پی میں 61.9 ارب روپے سے زائد کے7ترقیاتی منصوبوں کی منظوری ---------- سی ڈی ڈبلیو پی نے چار میگا پراجیکٹس کو مزید منظوری کیلئے ایکنک بھجوادیا ---------- ترقیاتی منصوبوں میں ٹرانسپورٹ و کیمونیکیشن، آبی ذخائر، انفارمیشن ٹیکنالوجی ، ماس میڈیا، افرادی قوت اور اعلیٰ تعلیم کے منصوبے شامل ہیں ---------- سی ڈی ڈبلیو پی نے ٹرانسپورٹ سیکٹر میں 43.5 ارب روپے کے 2میگا پراجیکٹس کی منظوری دے دی ---------- ان منصوبوں میں ٹھوکر نیاز بیگ تا ہدیارہ ڈریں ملتان روڈ کی اپ گریڈیشن شامل ہے ---------- منصوبے کا بتدائی تخمینہ 10.3ارب روپے لگایا گیا ہے۔ ---------- منصوبے کے تحت موجودہ این 5 چار لین سڑک کی 11 کلو میٹر سیکشن کو اپ گریڈ کیا جائے گا ---------- منصوبے کیلئے اراضی کا حصول ٹیکسوں سے مستثنیٰ قرار دیا جائے، وفاقی وزیر احسن اقبال ---------- سی ڈی ڈبلیو پی نے جگلوٹ سکردو روڈ کی اپ گریڈیشن منصوبے کی منظوری دے دی منصوبے کا ابتدائی تخمینہ 33.13ارب روپے لگایا گیا ہے ---------- نیشنل ہائے وے اتھارٹی کے اس منصوبے کے تحت 164 کلو میٹر جگلوٹ سے سکردو ایس ۔1 شاہراہ کی اپ گریڈیشن کی جائے گی ---------- شاہراہ کی تعمیر سے سکردو اور گلگت بلتسان کے عوام کو بہتر سفری سہولیات میسر آئیں گی ---------- منصوبے پر تعمیراتی کا م شروع کرانے کیلئے فوری اقدامات کی جائے، وفاقی وزیر ---------- منصوبے کی ڈیزائنگ نقائص سے پاک ہو ، منصوبے کی لاگت کی تیسرے فریق سے توثیق کرائی جائے، وفاقی وزیر ---------- سی ڈی ڈبلیو پی میں وارسک کنال ری ماڈلنگ منصوبہ منظور منصوبے کا ابتدائی تخمینہ 12.14ارب روپے لگایا گیا ہے ---------- منصوبے کے تحت پشاور اور نوشہرہ کے اضلاع میں دریا کابل کےنہری نظام کو بہتر کیا جائے گا۔ ---------- آبی ذخائر کے منصوبوں کی فنڈنگ کے حوالے سے قومی اقتصادی کونسل کے 50/50فیصد فارمولے کو مد نظر رکھا جائے، وفاقی وزیر ---------- ایسے منصوبوں میں 50فیصد صوبائی حکومت جبکہ 50فیصد فنڈز کی ذمہ داری وفاق کی ہوگی، وفاقی وزیر ---------- سی ڈی ڈبلیو پی میں 10کروڑ روپے کی لاگت سے ایس سی او ٹیکنیکل ٹریننگ انسٹی ٹیوٹ گلگت بلتستان کے قیام کا منصوبہ منظور منصوبے کے تحت موجودہ اور روزگار کے نئے مواقعوں کے حوالے سے اعلیٰ معیارکی تربیت کیلئے تکنیکی ادارہ قائم کیا جائے گا ---------- اس منصوبوں سے گلگت بلتستان کے ہزاروں نوجوان کو جدید ٹیکنالوجیز کے بارے میں تربیت دی جائے گی اس ادارے کی عمارت کی تعمیر مقامی روائتی فن تعمیر کو مد نظر رکھ کر کیا جائے، احسن اقبال ---------- سی پیک کے تحت جاری فائبر آپٹک کا منصوبہ رواں سال دسمبر میں مکمل ہوگا جس سے یہ علاقے ایک نئے دور میں داخل ہوں گے، وفاقی وزیر ---------- فائبر آپٹک منصوبے کی تکمیل کیساتھ ساتھ گلگت بلتستان میں سافٹ وئیر پارک کے قیام پر کام شروع کیا جائے، احسن اقبال کی ہدایت ---------- سافٹ وئیر پارک کے قیام سے اس علاقے کے عوام انفارمیشن ٹیکنالوجی کے نئے دور سے مستفید ہوسکیں گے، احسن اقبال ---------- سی ڈی ڈبلیو پی نےسیاحت کے شعبے میں پنجاب ٹورازم و اکنامک گروتھ پراجیکٹ کی منظوری دیدی حکومت پنجاب کےاس منصوبے پر 5.7 ارب روپے کی لاگت آئے گی، منصوبہ ورلڈ بنک کے تعاون سے مکمل کیا جائے گا ---------- منصوبے کے تحت صوبہ پنجاب کے سیاحتی مقامات کو ترقی دینے اور آثار قدیمہ کو محفوظ بنایا جائے گا صوبے میں پہلے سےسیاحت کے شعبے میں کام کرنے والے اداروں کو اس منصوبے میں شامل کیا جائے ، وفاقی وزیر کی ہدایت ---------- سیاحت کو فروغ دینے وآثار قدیمہ کے تحفظ کیلئے تمام صوبے ماسٹر پلان بنائے، وفاقی وزیر احسن اقبال ---------- سیاحتی مقامات تک رسائی کیلئے سڑکوں و دیگرسہولیات کی تعمیر کیساتھ ساتھ معلومات کی فراہمی یقینی بنائی جائے، احسن اقبال ---------- سیاحتی مقامات کی مناسب تشہیر یقینی بنا کر دنیا بھر سے سیاحوں کومتوجہ کیا جائے، وفاقی وزیر ---------- سی ڈی ڈبلیو پی نے فاٹا اور خیبر پختونخوا کے نوجوانوں کی تکنیکی تربیت کا منصوبہ منظور کرلیا 78.6ملین روپے کے اس منصوبے کے تحت 1100نوجوانوں کو ٹیکنیکل ٹریننگ دی جائے گی ---------- سی ڈی ڈبلیو پی نے اعلیٰ تعلیم کے شعبے میں پیداواریت، معیار و جدت پراجیکٹ منطور کرلیا اعلیٰ تعلیم کے اس منصوبے پر 276.4ملین روپے کی لاگت آئے گی

Press Release

YEAR 2017; Completion of CPEC early harvest projec...

Published : 12 June 2017

Islamabad, June 12, 2017:- The year 2017, an important year for China ...


Federal Minister Ahsan Iqbal addressing at Nationa...

Published : 29 May 2017

وفاقی وزیر برائے منصوبہ بندی و ترقی اح...


Ahsan Iqbal addressing Senate Of Pakistan...

Published : 29 May 2017

وفاقی وزیر برائے منصوبہ بندی و ترقی ا...


اسلام آباد میں وفاقی وزیر ا...

Published : 26 May 2017

اسلام آباد میں وفاقی وزیر احسن اقبال ک...


CDWP approves 18 projects of worth Rs 154 billion

Dated : 17 January 2017

Islamabad : The Central Development Working Party( CDWP) approved various significant projects to transmit electricity from the power plants to the national grid for transfer to upcountry load centres.

Overall, the CDWP approved 18 projects of worth Rs154 billion, including seven project costing Rs 134 billion, which were referred to the Executive Committee of the National Economic Council (ECNEC). In addition it approved two position papers.

The meeting was chaired by Federal Minister for Planning, Development and Reform Prof Ahsan Iqbal, and was attended by senior officers of the provincial governments and ministries concerned.

In energy sector, CDWP approved and referred two projects including evacuation of power from 2 x1100 MW K-2/K-3 coastal power plants near Karachi worth Rs 5.6 billion with FEC Rs 2.6 billion and evacuation of power from 2 x 660 MW Thar coal based SSRL/SECL power plant at Thar worth Rs 23 billion with FEC Rs 12 billion to ECNEC. It also approved evacuation of power from 350 MW Siddiqsons energy coal fired power plant near Port Qasim worth Rs 2.9 billion with FEC Rs 1.4 billion. The three projects aim to transmit power from the power plants and transfer it to the national grid .

The CDWP approved rehabilitation of damaged 66 KV grid station at Ghiljo Orakzai Agency worth Rs 145 million and construction of 132 KV SDT transmission line for making interconnecting arrangement between 132 KV grid station Kharan & Mall grid (82 KM) worth Rs 650 million . It referred 500 KV Chakwal substation worth Rs 7 billion with FEC Rs 3.8 billion to ECNEC.The CDWP also gave clearance and referred revised Koto hydropower project located in Lower Dir, Khyber Pakhtunkhwa to ECNEC worth Rs 14 billion with FEC Rs 7 billion.

In transport and communication sector, CDWP approved revised project of improvement and construction of Jalkhad- Chilas road project worth Rs 7.8 billion, feasibility studies of up-gradation of existing railway line from Rohri to Koti- Taftan via Quetta including the realignment of Sibi-Spezand Section (1022 kms) and feasibility study of rail link from Quetta to Kotla Jam (538 Kms) (updation of existing feasibility study) worth Rs 292 million. This project would help to connect Quetta to Peshawar through rail.
It also approved up-gradation of VHF communication system for operational staff worth Rs 737 million. In addition it approved up-gradation of road from RCC Konodas Bridge to Naltar Airbase Camp via Nomal (47 km) of worth Rs 2.7 billion.

The CDWP approved saaf suthro Sindh (SSS) Programme - scaling up of rural sanitation worth Rs 1.5 billion in principle. While giving his observations Federal Minister Ahsan Iqbal observed that the project needed restructuring to ensure solid outcomes and deliverables. The CDWP approved Punjab Irrigated Agriculture Productivity Improvement (PIPIP) worth Rs 80 Billion with FEC Rs 48 billion. Federal Minister Ahan Iqbal stressed the need to partner agricultural university in this project for research and innovation purposes.

In Higher Education, CDWP approved provision of academic and research facilities, Air University, Islamabad worth Rs 1.6 billion with FEC Rs 269 million. However, the minister urged to rationalise scope of the project.

In Information Technology, CDWP approved provision of seamless GSM Coverage along KKH in support of China Pakistan Economic Corridor (CPEC) and up-gradation of GSM Network for Gilgit Baltistan Phase-II worth Rs 3.3 billion.

The CDWP approved institutional strengthening & efficiency enhancement of Planning Commission worth Rs 200 million. It gave clearance to two projects in principle which includes Pakistan Programme - revival of wildlife resources in Pakistan worth Rs 1.1 billion and Zoological survey of Pakistan worth Rs 99 million. The chair observed to review and rationalize the cost of the project .

In addition, CDWP also approved 2 position papers which includes construction of 100 dams in Tehsil Dubandal, Gulistan, Killa Abdullah and Chaman area in Killa Abdullah worth Rs 1.5 billion and Pehur high level canal extension district Swabi worth Rs 10 billion.