Ministry of Planning
Development & Reform
News Alerts: وفاقی وزیر برائے منصوبہ بندی و ترقی احسن اقبال کی وزارت منصوبہ بندی کے افسران اور میڈیا کے نمائندوں ترقیاتی منصوبوں میں شفافیت کے لئے اٹھائے گئے اقدامات اور ان کے نتائج پر گفتگو ---------- ‏وفاقی حکومت نے۲۰۱۳میں پلاننگ کمیشن کو دوبارہ خودمختار حیثیت دی تاکہ پیشہ ورانہ مہارت کےحامل افراد کے ذریعےمنصوبہ بندی کا عمل مؤثربنایا جاسکے ‏ہم نے منصوبہ بندی کے عمل میں شفافیت کو فروغ دیا اور ٹوکن رقم رکھ کر نئے منصوبے بنانے کے عمل کی حوصلہ شکنی کی، احسن اقبال ---------- ‏وزارت منصوبہ بندی کے قابل اور اہل اہلکاروں اور افسران کی محنت کی بدولت ہم اس قابل ہوئے کہ قومی خزانےکے 550 ارب روپےبچا سکے، احسن اقبال ---------- ‏وزارت منصوبہ بندی کی کوششوں کے نتیجے میں نیو اسلام آباد انٹرنیشنل ائیرپورٹ اور منڈا ڈیم جیسے منصوبوں کو ازسر نو زندہ کیا، احسن اقبال ---------- ‏وزرات منصوبہ بندی نے ماضی کے برعکس سیاسی دباؤ ہر منصوبے بنانے کی بجائے ماہرین کی مشاورت سے قابل عمل منصوبوں کا آغاز کیا، احسن اقبال ---------- ‏وزارت منصوبہ بندی نے ۷۵۲ منصوبوں میں شفافیت اور اخراجات میں توازن رکھ کر۵۵۰ ارب روپے کی بچت کی، احسن اقبال ---------- آج کا دن ہمارے لیے خوشی منانے کا ہے اس وزارت کے افسران اور اہلکاروں کا یہ اعزاز ہے کہ ہم نے اپنی محنت سے 550 ارب کی بچت کی اس رقم کی بچت کو کسی نئے منصوبے میں لگایا جائے گا، احسن اقبال ---------- ہم نے پہلے مکمل طور پر تخمینہ لگایا، انکی فیزیبلٹی رپورٹ بنائی گئی اور پھر فنڈز کی فراہمی کو یقینی بنایا، احسن اقبال ---------- ‏نیلم جہلم پراجیکٹ 80 ارب سے بنایا جانا تھا لیکن غلط منصوبہ بندی اور سیاسی عوامل کی وجہ سے آج اس پر 400 سے شائد ارب لگ رہے ہیں، احسن اقبال ---------- ‏نیلم جہلم منصوبے کے بنیادی حقائق کا تخمینہ ہی نہیں لگایا گیا تھا جسکے سبب اب اتنی بڑی رقم لگ رہی ہے، احسن اقبال ---------- ‏ہمیں این 85 جیسے منصوبے ورثے میں ملے، ہم نے ان کا ازسرنو جائزہ لیا اور منصوبوں کو قابل عمل بنایا، احسن اقبال ---------- ‏لواری ٹنل کے منصوبے ہر بھی تقاریر تو ہر دور میں ہوئی پر فنڈ کسی نے جاری نہیں کیے، احسن اقبال ---------- اسلام آباد ایئرپورٹ کو ایک سفید ہاتھی بنا دیا گیا تھا نہ پانی کا انتظام ہوا نہ رابطہ سڑکیں بنائی گئی نہ ہی بجلی کا بندوبست ہوا، احسن اقبال ---------- رواں سال نیو اسلاآباد ایئرپورٹ پر آپریشن کا آغاز کر دیا جائے گا، احسن اقبال ---------- بلوچستان کی کچی کنال کے لیے فنڈ جاری کیے جس سے صوبے بھر کو پانی کی سہولت میسر ہو جائے گی، احسن اقبال ---------- ‏کرم ٹنگی ڈیم کا منصوبہ بھی کئی سال سے التوا کا شکار تھا، احسن اقبال

Press Release

اسلام آباد میں وفاقی وزیر ا...

Published : 26 May 2017

اسلام آباد میں وفاقی وزیر احسن اقبال ک...


Federal Minister Ahsan Iqbal has said that Pakista...

Published : 19 May 2017

Federal Minister Ahsan Iqbal has said that Pakistan’s economy has re...


Gwadar would become an international smart port c...

Published : 15 May 2017

BEIJING, May 15, 2017: Pakistan and China signed various agreements an...


Ahsan Iqbal has refuted news story titled “CPEC ...

Published : 15 May 2017

Minister for Planning, Development & Reform Professor Ahsan Iqbal has...


CPEC Tower to be built in Islamabad

Dated : 6 March 2017

Decision is reached to build The CPEC Tower in the capital city, Islamabad. The tower will be the tallest building in the city and will serve as a symbol of socioeconomic progress Pakistan is making across all the fronts.

Minister for Planning, Development and Reforms (PD&R), Ahsan Iqbal noted that the iconic tower will attract investors & will serve as a symbol of branding Pak-China Friendship.

The decision was taken in a meeting chaired by Minister Ahsan Iqbal at Planning Commission in Islamabad on Monday. Senior officials from the PD&R, other line ministries and departments attended the meeting.

A high level committee to be headed by Malik Ahmed Khan, Member Infrastructure, PD & R will work on the proposed CPEC tower.

While speaking on the occasion, Ahsan Iqbal laid down the tasks for the committee. Directions were given to conduct a feasibility study after identifying a suitable site. It was further directed to acquire the land in the light of feasibility study.

“Committee should sit with relevant departments to resolve issues of building codes and regulations” said Minister Iqbal.

Minister Iqbal stated that the initiative will provide facilitation to Chinese and other investors from around the world. He further said that the tallest building would help in image building of Islamabad as a sustainable and vibrant city thriving upon entrepreneurship, science and technology, research and development, finance and culture.

“CPEC tower should be equipped with state of the art hotel, office spaces, commercial spaces and modern facilities”. said Minister.