Public Awareness Campaign ON Corruption: "United Against Corruption for a Prosperous Pakistan....."

Press Release

سیکرٹری منصوبہ بندی شعیب ا...

Published : 14 May 2018

اسلام ۤباد میں سنٹر آف ایکسلینس کے زیر ...


Mr. Shoaib Ahmed Siddiqui Secretary Planning Commi...

Published : 11 May 2018

سیکرٹری منصوبہ بندی شعیب احمد صدیقی ن...


سیکرٹری منصوبہ بندی، ترقی و...

Published : 8 May 2018

سیکرٹری منصوبہ بندی، ترقی و اصلاحات شع...


نیشنل اکنامک کونسل بجٹ کی م...

Published : 25 April 2018

نیشنل اکنامک کونسل بجٹ کی منظوری نہیں ...


Meeting with PEAC members on Health Project

Dated : 26 April 2017


وفاقی وزیر برائے ترقی و منصوبہ بندی احسن اقبال نے جلد از جلد اسلام آباد میں جدید آلات سے آراستہ کینسر کی ابتدائی تشخیص کے لیے نئے انسٹی ٹیوٹ کے قیام کی ہدایت کی ہے ۔

اسلام آباد میں وزارت ترقی و منصوبہ بندی پی بلاک میں وفاقی وزیر احسن اقبال کی زیر صدارت پاکستان اٹامک انرجی کمیشن کے عہدہ داروں سے میٹنگ ہوئی جس میں کمیشن کی جانب سے آئندہ سال تین کینسر ہسپتالوں کی اپ گریڈیشن کے حوالے سے بریفنگ دی گئی
کمیشن کا کہنا تھا کہ ملک میں تین بڑے کینسر ہسپتالوں کی اپ گریڈیشن پر2.3 ارب روپے کی لاگت آئے گی ، جس میں اسلام آباد کے نوری ہسپتال میں جدید آلات کی خریداری کے لیے870ملین ، انمول لاھور کے لیے 530ملین جبکہ کرن کراچی پر920ملین روپے کی لاگت کا تخمینہ دیاگیا ۔ بریفنگ میں وفاقی وزیر احسن اقبال نے اسلام آباد میں جدید آلات سے آراستہ کینسر تشخیصی مرکز کے قیام کی ہدایت کی ۔ احسن اقبال کا کہنا تھا کہ کینسرکے علاج کے لیے یہ نیا ہسپتال نہ صرف ابتدائی تشخیص کرے گا بلکہ کینسر کے حوالے سے ریسرچ کا کام بھی سر انجام دے گا ، اور اس ریسرچ سنٹر میں کینسر کے شعبے میں جدید خطوط پر تحقیق یقینی بنائی جائے گی ۔ مزید برآں انہوں نے اسلام آباد میں قائم نوری ہسپتال اور پمز ہسپتال دونوں کو جدید آلات سے آراستہ کرنے کی بھی ہدایت کی ، احسن اقبال کا مزید کہناتھا کہ کینسر کے علاج کے لیے کام کرنے والے موجودہ اداروں کو ادوایات اور جدید آلات کی فراہمی ممکن بنائی جائے، کینسر کے ساتھ ساتھ جگر کے امراض کی تشخیص اور علاج کیلئے کام کیا جائے، اور کینسر کے ساتھ پاکستان میں جگر ٹرانسپلانٹیشن کی سہولت فراہم کرنے کیلئے اقدامات یقینی بنائی جائے۔ احسن اقبال نے بریفنگ میں عہدے داروں کو ہدایت کی کہ ملک میں باہر سے ویکسین منگوانے کی بجائے مقامی طور پر ریسرچ اور تیاری کا کام کیا جائے ۔ اور کینسر سے متعلق اسلام آباد میں ریسرچ سنٹر کا قیام کا عمل اسی سال شروع کیا جائے۔