Ministry of Planning
Development & Reform

Press Release

Federal Minister Ahsan Iqbal inaugurated Kamra Air...

Published : 6 July 2017

وفاقی وزیر برائے منصوبہ بندی و ترقی اح...


CDWP approves 178.3 billion for 17 development pro...

Published : 6 July 2017

Islamabad, July 06, 2017:- The Central Development Working Party has a...


INDUSTRIALIZATION UNDER CPEC NOT AT EXPENSE OF LOC...

Published : 4 July 2017

Islamabad (4 July 2017): Federal Minister for Planning, Developing & R...


سائنس ٹیلنٹ فارمنگ سکیم کے ...

Published : 4 July 2017

وزارت سائنس اینڈ ٹیکنالوجی میں اجلاس۔ ...


Ahsan Iqbal addressing Senate Of Pakistan

Dated : 29 May 2017


وفاقی وزیر برائے منصوبہ بندی و ترقی احسن قبال نے کہا ہے کہ ترقیاتی بجٹ کو چار سالوں میں 300 ارب سے 1000 ارب روپے تک پہچانا ، ہمارے ترقیاتی ایجنڈے کی علامت ہے ۔ ایک کھرب سے زائد کا وفاقی ترقیاتی بجٹ ریکارڈ ہے
وفاقی وزیر برائے منصوبہ بندی و ترقی احسن اقبال نے سینیٹ آف پاکستان میں خطاب کرتے ہوئے کہا کہ مسلم لیگ ن کی حکومت نے صوبوں کے لیے ترقیاتی بجٹ کے لیے 1112 ارب روپے مختص کیے ہیں ۔ پہلے روایت تھی کہ آخری سال میں نئے ترقیاتی منصوبوں کے فیتے کاٹے جاتے تھے جبکہ ہم نے ترقیاتی بجٹ کا 90 فیصد جاری منصوبوں کے لیے مختص کیا ہے ۔ اور ہماری ترجیح ہے کہ جاری منصوبوں جلد از جلد مکمل کیا جائے

احسن اقبال نے سینیٹ میں تعلیم کے حوالے سے اپنے خطاب میں بات کرتے ہوئے کہا کہ ایچ ای سی کے بجٹ کو چار برسوں میں میں 21 ارب روپے سے بڑھا کر 35.5 ارب روپے کر دیا گیا ہے ۔ اگلے دو سال میں کوئی ضلعی ہیڈ کواٹر ایسا نہیں رہے گا جہاں یونیورسٹی یا زیلی کیمپس نہن اقبل نے کہا کہ ماضی میں فوجی حکومتوں نے امریکہ کے ساتھ ایف سولہ یا ہتھیاروں کے معایدے کیے تھے ۔ ان فوجی حکومتوں نے کھبی امریکہ کے ساتھ یونیورسٹیون میں تعلیم کے حصول کے حوالے سے معایدہ کرنے کا نہیں سوچا جبکہ ہماری حکومت ہر ضلع میں یونیورسٹی یا زیلی کیپمپس بنا رہی ہے ۔ ہم نے پاکستان اور امریکہ کے درمیان نالج کاریڈور کا معاہدہ کیا ہے، اس معاہدہ کے تحت اگلے دس سال میں 10 ہزار سکالرز امریکی یونیورسٹی سے پی ایچ ڈی کریں گے ۔ ہم مرکز برائے بین التہذیب تعون قائم کریں گے ۔
ترقیاتی منصوبوں کے حوالے سے احسن اقبال کا سینیٹ میں کہنا تھا کہ قومی ترقیاتی منصوبوں کے لیے 384 ارب روپے مختص کیے ہیں ۔ جس میں اسلام آباد کے لیے 42 ارب روپے کے ترقیاتی منصوبے ، پنجاب کے لیے 97 ارب روپے ، سندھ کے لیے 70 ارب، خیبر پختوانخوا کے لیے 93 ارب روپے ، بلوچستان کے لیے 80 ارب روپے ، آزاد کشمیر کے لیے 32 ارب روپے اور فاٹا کے لیے 29 ارب اور گلگت بلتستان کے لیے 29 ارب روپے ترقیاتی منصوبوں کے لیے مختص کیے ہیں ۔